Amb. Akbar Ahmed: Waba Kay Daur Main Mazhab
Amb. Akbar Ahmed: Waba Kay Daur Main Mazhab

وبا کے دور میں مذہب
نشانیاں چار سو ہیں
اور نتائج ہمارے سامنے
اک انتہائی چھوٹی شےنے
جسے ہم دیکھ بھی نہیں سکتے
طاقت ور ترین قوموں کو
جو تباہ کن جہازوں اور میزائیلوں سے لیس ہیں
گٹنوں کے بل گرا دیا ہے 

مہاتما بدھ نے سچ کہا تھا
زندگی دکھوں سے عبارت ہے
اور اس نے متنبہ بھی کیا۔
کنفیو شئس کی خواہش تھی
کہ ہم والدیں کا احترام کریں

اور لاوُ
چائے نوشی کے ہنر کا فروغ
اور بانس کے جنگلوں میں چہل قدمی کا خواہش مند تھا
شری رام نے
راستبازی کی راہ دکھائی
جو امن اور شانتی کی متقاضی تھ
موسیٰ ؑنےہمیں دس احکامات خداوندی دیے
اور عیسیٰ ؑنے ہمیں ایک دوسرے سے محبت کا درس دیا۔

:محمدؐ نے فرمایا
تم درمیانی امت ہو
اور توازن قائم کرو
حیات ارضی اور حیات اخروی میں
 انہوں نے ہمیں اپنے ہاتھ دن میں پانچ دفعہ دھونے کا کہا
اپنے چہروں کو ڈھانپنے
اور اپنے دل پر ہاتھ رکھ کر ملنے  کا کہا
اور دوسروں کے سامنے
عاجزی اور انصاف پسندی  اختیار کرنےکی تلقین کی
فرمایا: یاد رکھو موت تمہارے ساتھ رہتی ہے
تمہاری شہ رگ  کی طرح تمہارے  قریب
اور خدا ہی تمہاری قسمت کا فیصلہ کرتا ہے
اور یہ کہ
اس کائنات  کی  ہر شے
ہمدردی اور رہمدلی کی صفات الہیٰہ کی شاندار مظہر ہے

 ترجمہ: ڈاکٹر صفدر شاہ