حکومت پاکستان کیجانب سے نوجوانوں کیلئے افسوسناک خبر سامنے آگئی

5
حکومت پاکستان نے نئی گاڑیوں کی خریداری اور نوکریوں پر پابندی عائد کردی اور اس سلسلے میں میمورنڈم جاری کردیا۔ حکومت نے مالی سال 2019-20 کے لیے مزید کفایت شعاری اور بچت اقدامات کرتے ہوئے وزارتوں ، ڈویژنوں ، محکموں اور سرکاری تنظیموں پر ہر قسم کی نئی گاڑیوں کی خریداری پر پابندی عائد کر دی ہے تاہم موٹرسائیکل کی…

گاڑیوں پر پابندی تمام موجودہ اور ترقیاتی اخراجات کے لیے بھی ہوگی، وزارت خزانہ کے جاری میمورنڈم میں سرکاری محکموں کوہدایات جاری کر دی گئی ہیں جن کا اطلاق فوری طور پر کر دیا گیا ہے، میمورنڈم کے مطابق ترقیاتی منصوبوں اور مجاز اتھارٹی کی منظوری کے علاوہ ہرقسم کی نئی اسامیوں کی تخلیق پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

مجاز افسران کو صرف ایک اخبار، میگزین تک محدود کر دیا گیا ہے ، سرکاری اداروں کے پرنسپل اکائونٹنگ افسران بجلی ، گیس ، ٹیلی فون ، پانی وغیرہ کے بلوں ، اثاثہ جات کی خریداری کے اخراجات ، مرمتی کاموں اور دیگر آپریشنل اخراجات کو کم سے کم سطح پر رکھنے کو یقینی بنائیں اور مالی سال کے لیے مختص کردہ بجٹ کے اندر رہتے ہوئے کم سے کم اخرجات کریں ، یہ ہدایت بھی کی گئی ہے کہ سرکاری خط وکتابت کے لیے کاغذ کی دونوں اطراف کو استعمال میں لایا جائے، وزارتوں ، ڈویژنوں ، محکموں اور سرکاری تنظیموں کے ناگزیر ضروریات کو پورا کرنے لیے ایک کفایت شعاری کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو صرف ضروری ، ناگزیر صورت میں گاڑیوں کی خریداری اور نئی پوسٹوں کی تخلیق سے متعلق تجاویز کا جائزہ لے گی ،کفایت شعاری کمیٹی کے چیئرمین ایڈیشنل فنانس سیکریٹری (اخراجات )ہونگے۔